کالعدم تنظیموں کے خلاف کارروائی

aaaaa

اب تک حکومت کالعدم تنظیموں کے خلاف مقدمات درج نہیں کرسکی، کیونکہ وہ اس بارے میں کوئی صفائی پیش کرنا ہی نہیں چاہتی ۔ کالعدم تنظیموں کے خلاف شواہد موجود ہیں، لیکن حکومت کوئی حتمی قدم اٹھانے سے قاصر ہے۔ نیکٹا کی ویب سائٹ پر موجود فہرست کے مطابق وفاقی حکومت کی جانب سے اب تک 63 تنظیموں پر پابندی عائد کی جاچکی ہے جو کہ برائے نام ہی پابندی ہے مگر انکےخلاف کبھی ایکشن نہیں لیا گیا ۔۔ جماعت الاحرار اور کالعدم لشکر جھنگوی العالمی نامی اور دیگر متعدد تنظیمیں فرقہ وارانہ دہشت گرد کارروائیوں میں مصروف ہیں مگر نا نیشنل ایکشن پلان پر کبھی عمل ہوا نا ہی نیب اور دیگر اداروں نے کسی جماعت پر ایکشن لیا ۔۔ پرتشدد واقعات میں ملوث تنظیموں کے ارکان کو گرفتار کیا جانا چاہیے ۔۔ ایسی تنظیموں کو آئندہ پاکستانی سر زمین پر سرگرم ہونے کی ہرگز اجازت نہیں دینی چاہیے ۔۔

گرفتاریوں اور تحقیقات کے بعد ان لوگوں کے خلاف طے شدہ طریقہ کار کے مطابق فوجی عدالتوں میں مقدمات چلائے جائیں ناکہ ان کی دہشت گرد تنظیموں حکومتی ادارے کریں ۔۔ فوجی عدالتوں میں مقدمات جائیں گے تب ہی کچھ حالات کو مزید بہتر بنایا جاسکتا ہے ۔۔ یا پھر حکومت اپنے اداروں کو ٹھیک کرے اور پاکستان کے نمائندہ ہونے کا ثبوت دے ان تنظیموں کے خلاف ایکشن لے ۔۔

حکومت کو چاہیے کہ وہ کالعدم تنظیموں کی شناخت اور ان کے اہم کارندوں پر کڑی نظر رکھنے کو یقینی بنائے ۔۔ ایسے گروہوں کی بھی جانچ ہو گی جو پابندی عائد ہونے کے بعد دوسرے ناموں سے سرگرم ہیں ۔۔ انسداد دہشت گردی ایکٹ کے چوتھے شیڈول کے تحت فوجداری الزامات کا سامنے کرنے والوں کی بھی مکمل نگرانی ہونی چاہیے ۔۔ 72 کالعدم تنظیموں میں سے کتنی سرگرم ہیں اور کتنی تنظیموں نے اپنے نام تبدیل کیے اور کیا ان کے علاوہ بھی کوئی تنظیم یا گروپ حکومتی اداروں سے چھپا تو نہیں ہوا ؟ اس بات کو بھی یقینی بنائیں ۔۔

حکومت ووٹ بینک کی وجہ سے تنظیموں کے خلاف کارروائی کرنے سے خوفزدہ ہے ۔۔ ملکی سیاست میں یہ ایک مسئلہ ضرور ہے کہ کالعدم تنظیم کے افراد آزاد حیثیت میں انتخابی سیاست میں حصہ لیتے ہیں ۔ سیاسی جماعتیں کوئی مضبوط امیدوار کھڑا کرنے میں ناکام ہوں تو اس کا فائدہ مذہبی تنظیم کے امید وار کو ہوتا ہے ۔ حکومت اس بات سے خوفزدہ ہے کہ ایسی تنظیموں کے خلاف کارروائی کرنے سے ان کے اپنے ووٹ بینک پر اثر پڑے گا جو ان کے امیدواروں کے اچھا نہیں ہو گا ۔ حکومت اپنی حکمرانی بچانے کے لیے کالعدم کی دبے لفظوں میں پشت پناہی کر رہی ہے ۔۔ نیشنل ایکشن پر حکومت موثر طریقے سے عمل کرے اور کالعدم تنظیموں یا ان سے تعلق رکھنے والے کیسی شخص کو آزاد یا سیاسی جماعت کے ساتھ الیکشن میں حصہ نہ لینے دے ۔۔

سانحہ پولیس ٹریننگ کالج ، پشاور اے پی ایس سکول ، باچا خان یونیورسٹی ، کوئٹہ میں عدالت کے باہر دھماکے جیسے واقعات کے باوجود بھی حکومت نے کالعدم تنظیموں کو کھلا چھوڑا ہوا ہے جو کہ حیران کن اور لمحہ فکریہ ہے ۔۔ کالعدم تنظیم سپاہ صحابہ کے بانی حق نواز جھنگوی کے بیٹے کی ضمنی انتخابات میں کامیابی اور مسرور نواز جھنگوی پنجاب اسمبلی کے رکن منتخب ہونا حکومت کی نااہلی ہے یا برابر کی شراکت ؟ شریک جرم نہ ہوتے تو مخبری کرتے ایکشن لیتے ۔۔ حکومت نے نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد کےلیے وہ کر دار ادا نہیں کیا جو اس کو ادا کرنا چاہیے تھا ۔ اب اسکا مداوا کیسے کریں گے اور کریں گے بھی یا ؟؟ نیشنل ایکشن پر حکومت کو موثر طریقے سے عمل کرنا چاہیے ۔۔ دہشت گردوں اور ان کی تنظیموں کے بیانات اور مؤقف نشرکرنے والوں کے خلاف کارروائی کرنی چاہیے ۔۔

وزارت داخلہ میں قیادت کا فقدان اور دہشت گردی کے خلاف جاری جنگ میں کنفیوژن ہے، وزارت داخلہ کی افسر شاہی وزیر داخلہ کی خوشامد میں لگی ہوئی ہے، دہشت گردی کے خلاف جنگ میں وزارت داخلہ کو اس کے کردار کا علم ہی نہیں ورنہ نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد ضرور ہوتا ۔۔ کالعدم تنظیموں کے جلسے جلوس منعقد کرنے پر انسداد دہشت گردی ایکٹ کے تحت کارروائی ہونی چاہیے ۔۔

14717189_1163070690445540_4589278777375106496_n11896117_932970133415916_8775096669040026324_n12002922_932970203415909_7592654327800939259_n10366178_909100299175915_7060001731308510005_n

Advertisements

About Raja Muneeb

Raja Muneeb ur Rehman Qamar ( Raja Muneeb - راجہ منیب ) born in Rawalpindi ( Punjab - Pakistan ). Born 7 March 1991 (1991-03-07) Rawalpindi, Punjab, Pakistan . Blogger , writer , Columnist and Media Activist & Analyst . https://www.facebook.com/iamRajaMuneeb RajaMuneebBlogger.wordpress.com , Twitter : https://twitter.com/iamRajaMuneeb http://about.me/rajamuneeb dailymotion : http://www.dailymotion.com/rajamuneeb myspace : https://myspace.com/1rajamuneeb google plus : https://plus.google.com/113474032656188645427/posts gulzar tv : http://www.gulzar.tv/about-us.php

Posted on December 23, 2016, in Uncategorized. Bookmark the permalink. Leave a comment.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: