راحیل شریف اور انکی کامیابیاں

15095588_1698498237146323_476317806189899624_n.jpg

جنرل راحیل شریف نےسولہ جون 1956 کو کوئٹہ میں ایک فوجی گھرانے میں آنکھ کھولی۔ان کے والد میجر شریف بھی بری فوج سے وابستہ تھے جبکہ شریف کے بڑے بھائی اور نشان حیدر میجر شبیر شریف سابق صدر جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کے کورس میٹ تھے اور وہ 1971 کی جنگ میں شہید ہوئے۔

راحیل شریف نے گورنمنٹ کالج لاہور سے تعلیم حاصل کرنے کے بعد پاکستان ملٹری اکیڈمی میں شمولیت اختیارکی۔انہوں نے گریجویشن کے بعد 1976 میں کمیشن حاصل کیا اور فرنٹیئر فورس رجمنٹ کی مشہور زمانہ چھٹی بٹالین میں شامل ہوئے۔ خیال رہے کہ ان کے بھائی نے بھی اسی ریجمنٹ میں کمیشن حاصل کیا تھا۔

ایک نوجوان افسر کی حیثیت سے راحیل شریف نے گلگت میں انفینٹری بریگیڈ کے علاوہ پاکستان ملٹری اکیڈمی میں انتظامی معاملات بھی سنبھالے۔وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ راحیل شریف نے کامیابیوں کا سفر جاری رکھا اور خصوصاً سابق آرمی چیف پرویز مشرف کی سرپرستی میں انہوں نے انتہائی تیزی سے ترقی کی۔

مشرف نے شریف کو لاہور میں گیارہویں انفینٹری ڈویژن کی کمان سونپ دی۔ بحیثیت بریگیڈیئر ایک آزاد انفینٹری بریگیڈ سمیت دو انفنٹری بریگیڈ کی قیادت کر چکے ہیں جبکہ انہیں برطانیہ کے مشہور زمانہ رائل کالج آف ڈیفنس اسٹڈیز سے گرجویشن کا اعزاز بھی حاصل ہے۔

وہ ایک انفینٹری ڈویژن کے جنرل آفیسر کمانڈنگ سمیت پاکستان ملٹری اکیڈمی کے بھی کمانڈنٹ رہ چکے ہیں لیفٹننٹ جنرل کی حیثیت نے دو سال تک کارپس کمانڈر کی خدمات بھی سرانجام دیں جس کے بعد انہیں انسپکٹر جنرل ٹریننگ اور ایوے لو ایشن (تربیت و تشخیص) مقرر کر دیا گیا جہاں انہوں نے پاک فوج کی ٹریننگ کے معاملات دیکھے ستائیس نومبر کو حکومت نے چیف آف آرمی اسٹاف کے لیے خالی نشست پر راحیل شریف کی تعیناتی منظور کر لی جو چھ سال تک فوجی سربراہ کی ذمے داری نبھانے والے جنرل اشفاق پرویز کیانی کی جگہ لے لی ۔

15095030_725315724290214_4288364352470844334_n.jpg۔

پھر راحیل شریف نے بحثیت سپاہ سالار بہت سی اہم خدمات سرانجام دیں ہیں ۔ اور دہشت گردی کے خلاف مضبوط قدامات کر کے دہشت گردی پر کنڑول کیا ۔۔ جنرل راحیل شریف نے سوچ لیا تھا کہ وطن کو دہشت گردوں سے پاک کرنا ہے کامیابیاں اسی روز مل گئی تھیں ۔ جنرل راحیل شریف ایک سچے انسان ہیں اور عظیم خاندان سے تعلق رکھتے ہیں جس نے دھرتی کو دو شہداءاور راحیل شریف کی صورت میںایک بہادر غازی دیا۔ ان کی کامیابیوں کا فیصلہ آنے والی تاریخ کرے گی

جنرل راحیل شریف نے اپنی ریٹائرمنٹ سے قبل الوداعی دوروں کا آغاز کر دیا ہے۔ اس بات نے جنرل شریف کی مدت ملازمت میں توسیع سے متعلق قیاس آرائیوں کوختم کر دیا ہے ۔۔ پاکستان کے لیے یہ بھی عزاز کی بات ہے کہ چیف آف آرمی سٹاف جنرل راحیل شریف دنیا کے 10بہترین جنرلز میں سے پہلی پوزیشن پر ہیں ۔۔

امریکی ادارے ”اے بی سی“ کی رپورٹ کے مطابق پاک فوج کی نہ صرف پاکستان بلکہ دنیا میں ساکھ کافی کمزور ہو چکی تھی اور ملک دہشت و وحشت کے گرداب میں گھرا ہوا تھا۔ ایسے میں آرمی چیف جنرل راحیل شریف پاکستانی قوم کے لیے ایک مسیحا بن کر آئے اور قوم کو امن و آشتی کی نوید سنائی۔ انہوں نے نہ صرف پاک فوج کی گرتی ہوئی ساکھ کو پھر سے اوجِ کمال بخشا بلکہ کچھ اس انداز میں دہشت کے سوداگروں کے مقابل صف آراء ہوئے کہ قوم کے ہیرو قرار پائے۔ دہشت گردوں کی سرکوبی اور پاکستان کی ہر آفت و مصیبت میں خدمت کے باعث آج جہاں وہ قوم کی آنکھوں کا تارا ہیں وہیں عالمی برادری میں بھی ایک معتبر مقام پا چکے ہیں

آرمی چیف جنرل راحیل شریف کو ملک کے اندر اور باہر موجود دشمنوں سے انتہائی موثر انداز میں نمٹنے اور دہشت گردی کی جنگ میں اعلیٰ کارکردگی پر دنیا کا بہترین کمانڈر قرار دیا ۔ جنرل راحیل شریف نے پاکستان کے استحکام کے لیے کئی کامیاب فوجی آپریشنز کیے اور دہشت گردی کا ناسور جو دہائیوں سے ملک کے رگ و پے میں سرایت کر چکا تھااس کے خاتمے میں حیران کن کامیابیاں حاصل کیں۔ جنرل راحیل شریف ایسے ہی ملٹری کمانڈر ہیں جنہوں نے افواج پاکستان کو سنگل آرڈر سے کنٹرول کیا ۔

15134607_324716444588094_3971170069162876367_n.jpg۔

جنرل راحیل شریف نے فوج کے اندر ہی نہیں پورے پاکستان کے عوام کا دل جیتاہے ملک کے اندر ہی نہیں بیرون ملک بھی ان کا بہت احترام کیاجاتاہے انہوں نے نہ صرف پاک فوج کی گرتی ہوئی ساکھ کو پھر سے اوجِ کمال بخشا بلکہ کچھ اس انداز میں دہشت کے سوداگروں کے مقابل صف آراءہوئے کہ قوم کے ہیرو قرار پائے۔ دہشت گردوں کی سرکوبی اور پاکستان کی ہر آفت و مصیبت میں خدمت کے باعث آج جہاں وہ قوم کی آنکھوں کا تارہ ہیں وہیں عالمی برادری میں بھی ایک معتبر مقام پا چکے ہیں اس وقت پاکستان حالت جنگ میں ہے اور دہشت گردی کے خلاف ضرب عضب جاری ہے اور دہشت گردی پاکستان کا سب سے بڑا مسئلہ ہے اور جنرل راحیل شریف کی قیادت میں جس طرح پاک فوج دہشت گردی سے نمٹ رہی ہے وہ لائق تحسین ہے پہلی بار ایسا ہوا ہے کہ قوم اور فوج ایک پیج پر ہیں قوم کو جو بے پناہ محبت اپنے بہادر جرنیل راحیل شریف سے ہے وہ نہ تو نواز شریف اور نہ ہی کسی اور سے ہے۔ پوری قوم راحیل شریف کے پشت پر ہے اور راحیل شریف کی ہمت جرات اور انقلابی قیادت نے پوری قوم میں جوش و ہمت پیدا کی ہے۔ دہشت گردی کے خلاف قوم آج متحد ہے ۔۔

یہ خیبر سے لیکر گوادر تک پوری قوم کی خواہش ہے اور قوم سمجھتی ہے کہ سیاسی قیادت دہشت گردی کے خلاف جنگ اور چینلجزسے نمٹنے کی اکیلے صلاحیت و اہلیت نہیں رکھتی بلکہ سیاسی قیادت خود آپس میں دست و گریباں ہیں اور ایک دوسرے کی شکل تک دیکھنا گوارا نہیں کرتی آج بھی اگر کچھ مواقع پر سیاسی قیادت قوم کو اکٹھی نظر آتی ہے تو اس میں بلاشبہ اسی عظیم اور محبوب جرنیل کا ہاتھ ہے۔ یہ بھی ایک حقیقت ہے کہ ملک میں کئی بار سنگین سیاسی بحرانوں میں ہمارے عظیم سپہ سالار نے اہم کردار ادا کرتے ہوئے اسے مثبت انداز میں حل کرایا ہے کیونکہ وہ سمجھتے ہیں کہ پاکستان کو اس وقت جس طرح اتحاد و ملی یکجہتی کی ضرورت ہے وہ پہلے کبھی نہ تھی۔ محبوب سپہ سالار جنرل راحیل شریف کے مدت ملازمت میں توسیع نہ لینے کے فیصلے سے دہشت گرد قوتوں اور ملک میں انتشار و بدامنی پھیلانے والے عناصر کو یقیناً خوشی ہو گی مگر محب وطن اور پاک دھرتی سے پیار کرنے والے ہر پاکستانی کا دل دکھا ہے اور وہ نہیں چاہتا کہ ان کا وہ محبوب سپہ سالار جنرل جسے ساری دنیا نے عظیم جنرل قرار دیا ہے ملک کو حالت جنگ میں چھوڑ کر جائے۔ اس وقت ساری قوم کے امیدوں کا محور اور نئی روشن صبح اور پرامن پاکستان کی امید ہی تو جنرل راحیل شریف ہیں، جنرل راحیل شریف بلوچستان سمیت پورے پاکستان کی التجاء ہے کہ پرامن پاکستان کے قیام تک کمان سنبھال کر رکھنا پوری قوم آپ کے ساتھ کھڑی ہے، آرمی پبلک سکول کے معصوم شہدائ، باچا خان یونیورسٹی کے خوبصورت شہداء و دیگر شہیدوں کی روحیں بھی تم سے پر امید ہیں کہ ہمارے پاکستان کو ہمارے خاندانوں کیلئے پوری قوم کیلئے پرامن بنا کر دم لو اور کام ابھی باقی ہے تم مت جانا تم مت جانا اس وقت تک مت جانا جب تک پاکستانی اور ہر طالبعلم پرسکون اورخود کو محفوظ سمجھ کر گھر سے نہ نکلے۔ شہداء کا خون للکار رہا ہے پکار رہا ہے کہ جنرل راحیل شریف پرامن پاکستان تک ڈٹے رہو اس ملک کی سلامتی، خوشحالی اور امن تم سے وابستہ ہے لہذا تم مت جائو مت جائو۔ مگر انھوں نے جانے کا فیصلہ کر لیا ہے تو قوم کیا کر سکتی ہے امید ہے کہ وہ اپنے بعد کسی ایسے ہی بہادر شخص کو سپاہ سالار بنائیں گے راحیل شریف کی طرح ہی ملک و قوم کی خدمت کرے ۔

15179000_215891695520136_3857814965839162291_n۔

چیف آف آرمی سٹاف جنرل راحیل شریف نے الوداعی ملاقاتوں کا آغاز کردیاہے . جو قابل تحسین ہے، اس سے بے یقینی کا خاتمہ ہواہے جو ملک و قوم کے لیے نیک شگون ہے ۔ قوم جنرل راحیل شریف کی بصیرت کو سلام پیش کرتی ہے جنہوں نے اپنے دور میں نہ صرف ملک کو درپیش اندرونی خطرات کو دورکرنے کے لیے جرأت مندانہ پالیسی اختیار کی بلکہ بھارت کے جنگی عزائم کو بھی ناکام بنایا ۔

کرسی پر بیٹھے رہنے کی بجائے اگر قوم کے دل و دماغ میں جگہ بنائی جائے تو وہ کہیں زیادہ بہتر ہے جس کی بہترین مثال چیف آف آرمی سٹاف جنرل راحیل شریف نے پیش کی ہے

راحیل شریف نے تاریخی دور گزارا ہے راحیل شریف نے بہت سے چلینجز کا مقابلہ کیا. راحیل شریف باوقار انداز میں رخصت ہو رہے ہیں راحیل شریف نے جس وقت پاکستانی آرمی کی کمانڈ سنبھالی تو ملک میں امن و امان کی صورتحال انتہائی ابتر تھی۔انھوں نے دہشت گردوں کے خلاف سخت موقف اخیتار کیا اور سانحہ پشاور کے بعد پاکستان آرمی نے تمام تر ملک دشمن قوتوں کے خلاف بلا تفریق کاروائیاں کی۔اس سے امن و امان کی صورتحال میں بہتری ہونے لگی اور راحیل شریف ملک میں ایک مقبول آرمی چیف کی حثیت سے ابھرے۔ ضرب عضب کو کامیابی سے پایہ تکمیل تک پہنچایا ۔۔ راحیل شریف کا ایک اور اہم کارنامہ پاک چائنہ اقتصادی راہداری منصوبے کی تکمیل ہے جو انھوں نے رات دن ایک کر کے جلد سے جلد مکمل کروائی ۔۔ اور بلوچستان ، فاٹا ، ویزرستان اور تمام تر مسائل والے علاقوں میں چھوٹے بڑے آپریشنز ، جیسے آپریشن ضرب عضب ، کراچی آپریشن ، بلوچستان میں انٹیلیجنس بیسڈ محدود آپریشنز کرکے بہت سے دہشت گردوں کو پکڑا اور انھیں بے نقاب کیا اور سکیورٹی صورتحال بہتر بنائی اور بہت سے دہشت گرد پکڑے گئے اور بہت سے دہشت گردوں کو سزائے موت سنائی گئی ۔۔ راحیل شریف نے بھی کشمیر کے معاملے میں صاف اور واضح الفاظ میں پاکستانی اور کشمیری قوم کی نمائندگی کرتے ہوئے اپنا موقف پیش کیا اور کشمیر کو پاکستان کی شہ رگ قرار دیا ہے ۔۔ جنرل راحیل بہرحال 29 نومبر سے پہلے گھر چلے جائیں گے اور ان کی مدت ملازمت میں توسیع کا کوئی امکان دکھائی نہیں دیتا ۔ آرمی چیف جنرل راحیل شریف کو پاکستانی قوم کا زبردست خراج تحسین ۔۔ ریٹائرمنٹ کا وقت قریب آنے پر آرمی چیف سوشل میڈیا کا ٹاپ ٹرینڈ بن گئے۔الوداعی ملاقاتوں میں مصروف جنرل راحیل شریف کے کامیاب اقدامات اور خدمات سوشل میڈیا میں سب سے زیادہ زیر بحث ہیں

آرمی چیف کا کردار پاکستانی کی تاریخ میں سنہرے حروف سے لکھا جائےگا تاریخ آپکو ایک عظیم جنگجو اور سپاہ سالار کے طور پر یاد رکھے گی ۔۔ امید ہے نئے آرمی چیف بھی راحیل شریف کی طرح ہی پاکستان کو کامیابیوں سے ہم کنار کرنے کی کوشش جاری رکھیں گے اور راحیل شریف کی طرح ہی ملک و قوم کی خدمت جاری رکھیں گے ۔۔

15135925_324091664650572_7205593603551778996_n.jpg

Advertisements

About Raja Muneeb

Raja Muneeb ur Rehman Qamar ( Raja Muneeb - راجہ منیب ) born in Rawalpindi ( Punjab - Pakistan ). Born 7 March 1991 (1991-03-07) Rawalpindi, Punjab, Pakistan . Blogger , writer , Columnist and Media Activist & Analyst . https://www.facebook.com/iamRajaMuneeb RajaMuneebBlogger.wordpress.com , Twitter : https://twitter.com/iamRajaMuneeb http://about.me/rajamuneeb dailymotion : http://www.dailymotion.com/rajamuneeb myspace : https://myspace.com/1rajamuneeb google plus : https://plus.google.com/113474032656188645427/posts gulzar tv : http://www.gulzar.tv/about-us.php

Posted on November 22, 2016, in Uncategorized. Bookmark the permalink. Leave a comment.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: