NAP and G3 نیشنل ایکشن پلان اور گڈ گورننس :

9.-Better-Governance

نیشنل ایکشن پلان اور گڈ گورننس :

NAP and G3  (National Action Plan and Government Good Governance)

پاکستان میں پچھلے کچھ تیس سالوں کے حکومتوں کی کارکردگی کا جائزہ لیا جائے تو واضح ہوگا شاید ہی کوئی حکومت ہو جس کو نیشنل ایکشن پلان اور گوڈ گورننس کے لیے کام کیا ہو۔ اہل ِ وطن سوچ رہئے ہیں کہ کیا ملک کے کونے کونے میں بھوتوں نے ڈیرے جماء لیے ہیں ؟ جن پر ضرب ِعضب آپریشن ، نیشنل ایکشن پلان ، سرچ آپریشنز بے اثر ہو رہے ہیں ۔ جن اصحاب کے ہاتھ میں عوام نے ملک کی باگ دوڑ دی ہے وہ بھی اس سوال کا جواب نہیں دے سکتے ہیں کیونکہ کبھی انھوں نے اس پر توجہ دی ہوتو بتائیں نا کہ دہشت گردی کا بھوت کب جان چھوڑے گا پاکستانی عوام کی ؟ اب تو بچے بھی سوچ رہے ہیں کہ اسلامی جمہوریہ پاکستان کیسی ایٹمی قوت ہے جس کو بحرانوں نے گھیر رکھا ہے ۔۔ قدم قدم پر دہشت گردی ، فرقہ واریت ، ٹارگٹ گلنگ نے ناکے لگا رکھے ہیں ۔۔ بس جمہوریت کے ٹھیکدار میڈیا پر ایک دوسرے کو زیرو کرنے کے لیے خود بھی ہنگامہ آرائی میں مصروف ہیں ۔۔ کیا پاکستان کے علاوہ بھی دنیا کا کوئی ایسا ملک ہے جس میں مسلسل تواتر سے اتنے بڑے بڑے سانحات روہنما ہوتے ہیں ؟
۔

۔

اب تک ہزاروں شہری جاں بحق ہو چکے ہیں، سکیورٹی پر اربوں پیسے خرچ ہو چکے ہیں جب کہ جنوبی ایشیا کے چھوٹے چھوٹے ملکوں میں عوام پر امن زندگی گزار رہے ہیں ۔ ہمارے ہاں جمہوریت کے ٹھیکدار شاہوں کے وفادار حقیقی جمہوریت کا راگ الاپتے ہیں ۔ انھیں یہ معلوم نہیں حقیقی اور غیر حقیقی جمہوریت میں کیا فرق ہے موجودہ وقت کی سیاسی جماعتیں پرائیوٹ لمیٹڈ کمپنیاں جن ٹکٹ عام شہری نہیں خرید سکتا ۔۔ قومی ایکشن پلان، آپریشن ضرب عضب کے باوجود انتہا پسندوں کی کمر نہیں ٹوٹ رہی ہے ؟ ہر سانحے کے بعد یہی سننے کو ملتا ہے کہ دہشت گردی کا ناسور ہمیشہ کیلئے ختم کر دینگے۔ پھر سانحے کے نوٹس کی خبریں سننے کو ملتی ہیں مگر کوئی فائدہ نہیں ہوتا کچھ عرصہ بعد پھر نئے سے سب ہو جاتا ہے ۔۔

دہشت گردی کیخلاف جنگ میں فوج کا کردار روز روشن کی طرح عیاں ہے مگر منتخب حکومت اس جنگ میں اجلاسوں اور بیان بازیوں کے علاوہ کیا کردار ادا کر رہی ہے۔ فوج کا کام تو دہشت گرد پکڑنا اور عدالت بھیج دینا یا مار کر ختم کر دینا ہے ۔۔ کوئی بتائے گا کہ حکومت نے اس بارے میں کیا کیا ہے ؟ حکومت پر کیا ذمہ داری عائد ہوتی ہے ۔۔ 2003ء سے اب تک 30190دہشت گرد مارے گئے ہیں پھر بھی دہشت گردی زندہ ہے۔ کیا دہشت گردی بھٹو تھورا ہی ہے ۔۔ جو ہمیشہ زندہ رہے گا ۔۔

۔

اب ذرا بتاتا چلوں کہ نیشنل ایکشن پلان ہے کیا ؟

سزا یافتہ دہشت گردوں کی پھانسی دینا ، نفرت انگیز تقریر اور انتہاپسند مواد کی روک تھام ، دہشت گردوں اور دہشت گرد تنظیموں کے لئے فنانسنگ کرنے والے عناصر کو رکاوٹ دالنا یا ختم کرنا ۔۔ کالعدم تنظیموں کو دوبارہ اُبھرنے سے روکنے کے لیے اقدامات کرنا ۔۔ ایک سرشار انسداد دہشت گردی فورس کی تعیناتی کرنا ، رجسٹریشن اور مدارس کے قوانین بنانا اور ان پر عمل درامد کروانا ۔۔ میڈیا کے ذریعے دہشت گردی اور دہشت گرد تنظیموں کے پھیلاؤ پر پابندی ہو۔۔ دہشت گرد تنظیموں کے مواصلات کے نیٹ ورک کو ختم کیا جائے ۔۔ دہشت گردی کے لئے انٹرنیٹ کے غلط استعمال اور سوشل میڈیا کے خلاف اقدامات کیئے جائیں ۔
بہتری اور مجرمانہ انصاف کے نظام کی اصلاح ہونی چاہیں ۔۔ اسطرح کے کل بیس نکات شامل ہیں نیشنل ایکشن پلان میں ۔۔

۔

یہ کام افواج کے نہیں ہیں بلکہ حکومتی گورننس کے ہیں ۔۔ نیشنل ایکشن پلان کے ساتھ ساتھ ان معاملات کو کو بھی حکومت کو مد نظر رکھنے چاہیں کہ قانون کی حکمرانی اور اقتصادی ترقی کے درمیان تعلقات کی تحقیقات کرنے کے لئے اقدامات کئے جائیں ۔ سیاسی استحکام اور اقتصادی پیداوار کے درمیان باہمی تعلقات قائم کرنا ۔ کرپشن کے کنٹرول اور اقتصادی پیداوار کی جانچ پڑتال کرنا ۔۔ اٹھنے والی آواز اور احتساب اور اقتصادی صلاحتوں کے درمیان رابطہ قائم کرنا ، اقتصادی دہشت گردی کی روک تھام کرنا ۔۔ وغیرہ یہ سب گوڈ گورننس کے لیے لازم و ملزوم ہیں ۔۔

۔

کیا افواج اور پاکستانی عوام کا گوڈگورننس کا مطالبہ غلط ہے ؟ اگر نہیں تو پھر اس کو اتنا بڑا انا کا مسئلہ بنانے کے بجائے گوڈ گورننس کے کاموں میں تیزی لانی چاہیے ۔ افواج کو جو ذمہ داری دی گئی وہ تو وہ پوری کر رہے ہیں ۔۔ مگر جو ذمہ داری حکومت کی ہے کیا وہ حکومت پوری کر رہی ہے ؟ ۔ بات پھر وہی ہے علامہ اقبال نے کیا خوب کہا کہ

۔

پل بھر میں مسجد تو بنا دی ایمان کی حرارت والوں نے
من اپنا پرانا پاپی تھا جو برسوں میں نمازی نہ بن سکا

،

فوجی عدالتوں کا قیام تو کردیا مگر اب تک وفاقی حکومت وغیرہ نے کتنے کیس بھیجے فوجی عدالتوں میں ؟ یا دوسری عدالتوں نے دہشت گردی کی روک تھام میں کتنا کردار ادا کیا ؟ حکومت نے مذید دہشت گردی کے جنم لینے روکنے کے لیے کیا اقدامات کیے ؟
یہ سوالات وہ ہیں جو ہر پاکستانی کرتا ہے ۔ انہی کے جوابات دہشت گردی کےخلاف جنگ میں فیصلہ کن ثابت ہوں گے ۔۔

http://nacta.gov.pk/Download_s/Presentations/National_Action_Plan_NACTA_Pakistan.pdfً

About Raja Muneeb

Raja Muneeb ur Rehman Qamar ( Raja Muneeb - راجہ منیب ) born in Rawalpindi ( Punjab - Pakistan ). Born 7 March 1991 (1991-03-07) Rawalpindi, Punjab, Pakistan . Blogger , writer , Columnist and Media Activist & Analyst . https://www.facebook.com/iamRajaMuneeb RajaMuneebBlogger.wordpress.com , Twitter : https://twitter.com/iamRajaMuneeb http://about.me/rajamuneeb dailymotion : http://www.dailymotion.com/rajamuneeb myspace : https://myspace.com/1rajamuneeb google plus : https://plus.google.com/113474032656188645427/posts gulzar tv : http://www.gulzar.tv/about-us.php

Posted on November 20, 2015, in Balochistan, COAS, Governance, government, govt, india, kashmir, news, Pak Army, pakistan, raheel sharif, social, terrorism, war and tagged , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , . Bookmark the permalink. Leave a comment.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: